دھوپ سے بچنے کیلئے چشموں کا استعمال کیسا؟ ماہرین کا انتباہ

ریاض (نیوز ڈیسک) سعودی طبی ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ دھوپ سے بچنے کے لیے نقلی چشموں کا استعمال نقصان دہ ہوسکتا ہے لہذا شہری احتیاط برتیں۔

عرب میڈیا کے مطابق سعودی فوڈ اینڈ ڈرگ اتھارٹی ( ایس ایف ڈی اے) کا کہنا ہے کہ دھوپ کے نقلی چشموں کے استعمال سے آنکھوں کو زیادہ نقصان پہنچ سکتا ہے کیوں کہ آنکھ کی پتلی آس پاس کی روشنی سے ہم آہنگ ہونے میں معاون بنتی ہے لیکن نقلی چشمے رکاؤٹ بنتے ہیں۔

‘جب سورج کی روشنی آنکھوں پر پڑتی ہے تو نقلی چشمے کی صورت میں روشنی کی آنکھوں تک رسائی کا عمل محدود ہوجاتا ہے، تاریک جگہ پر روشنی کی رسائی زیادہ بہتر شکل میں ہوتی ہے’۔

سعودی فوڈ اینڈ ڈرگ اتھارٹی نے متنبہ کیا کہ غیرمعیاری نقلی چشموں کے استعمال سے آنکھوں کی پتلی پھیل جاتی ہے جس طرح تاریکی میں پتلی پھیلتی ہے۔

ایس ایف ڈی اے نے بتایا کہ مذکورہ صورت میں بالائے بنفشی شعاعوں سمیت سورج کی کرنیں زیادہ بڑے پیمانے پر گزرنے لگتی ہیں اور اسی سے نظر کو نقصان پہنچتا ہے، شہری مستند ڈسٹری بیوٹرز سے چمشے حاصل کریں کیوں کہ انہیں سعودی وزارت صحت کی جانب سے اجازت ہوتی ہے۔