تین شہروں میں 5595 ارب روپے کی سرکاری زمین مافیا کے قبضہ میں ہے، وزیراعظم

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم) پراحتجاج کی طرح ڈیجیٹل لینڈ ریکارڈزکی کیڈیسٹرل میپنگ پربھی شدید مزاحمت کا سامنا ہوا۔

اپنی ٹوئٹ میں وزیر اعظم کا کہنا تھاکہ سرکاری اراضی کے سروے کے پہلے مرحلے کے نتائج سے اس مزاحمت کی وجوہات سامنے آگئیں۔

ان کا کہنا تھاکہ سیاسی اشرافیہ لینڈ مافیا کے ساتھ مل کر جنگلات سمیت بڑے سرکاری رقبے پر قابض تھی۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ سروے میں مزید ہوشربا حقائق بھی ہمارے علم میں آئے ہیں، تین بڑے شہروں میں لینڈ مافیا کے زیرِقبضہ سرکاری زمین کی مالیت تقریباً 5595 ارب روپے ہے جبکہ جنگلات کے زیرِ قبضہ رقبے کی قیمت تقریباً 1869 ارب روپے ہے۔

ان کا کہنا تھاکہ جنگلات کی زمینوں پر قبضے سے جنگلات کے مناسب حجم سے متعلق موجودہ کمی میں شدت پیدا ہوئی، اس مصدقہ ڈیجیٹل ریکارڈ کی مدد سے لینڈ مافیاز اور ان کے سہولت کاروں کے خلاف کارروائی کریں گے۔