اپنے شہداء کو یاد رکھنا زندہ قوموں کی نشانی ہوتی ہے، ایس ایس پی ملیر عرفان بہادر

کراچی (کاشف احمد فاروقی) زندہ قوموں کی نشانی ہوتی ہے کہ وہ اپنے شہداء کو یاد کریں اور آج کا یہ کرکٹ فیسٹیول میچ سندھ پولیس کے شہداء کی یاد میں منعقد کیا گیا اور میں اس میچ کے اورگنایزر وسیم الدین کو مبارکباد پیش کرتا ہوں کہ انہوں نے صوبے میں امن بحال کرنے میں سندھ پولیس کے بہادر اورنڈر ساتھیو ن نے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کر کے امن بحال کیا اس موقع پر ایس ایس پی سینٹرل ملک مرتضی تبسم نے کہا کہ کھیلوں کی سرگرمیوں سے امن بحال کرنے میں بڑی مدد ملتی ہے اور سندھ پولیس کے آئی جی اور ایڈیشنل آئی جی صاحبان کی یہی خواہش ہے کہ صوبے میں امن بحال کرنے کے لیے کھیلوں کی سرگرمیاں زیادہ سے زیادہ کرائی جائیں جبکہ اس موقع پر ایس ایس پی ٹھٹھہ ڈاکٹر عمران خان نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آج مجھے یہ دیکھ کر خوشی ہوئی سندھ پولیس کے جوانوں میں بھی کھیلوں کا جذبہ موجود ہے اور ان شاء اللہ آنے والے دنوں میں سندھ پولیس کھیلوں کے مقابلوں میں پڑھ کر چلے گی اور ملک و قوم کا نام روشن کریں گی جبکہ اس موقع پر کھیلوں کی ہردلعزیز شخصیت حاجی اشرف نے کہا کہ مجھے آج کا میچ دیکھ کر بے انتہا خوشی محسوس ہوئی کے جوانوں کے ساتھ ساتھ سندھ پولیس کے 3 حاضر ایس ایس پیز عرفان بہادر ملک مرتضی تبسم اور ڈاکٹر عمران خان کھیل رہے ہیں اور انشاءاللہ جب بی سندھ پولیس کو کھیلوں کی ترقی کیلئے اور ٹورنامنٹ منعقد کرنے کے لئے میری ضرورت ہوئی تو میری خدمات ہمیشہ سندھ پولیس کے لیے حاضر ہیں گی تقریب کے آخر میں سابق ایڈمنسٹریٹر ڈی ایم سی ایسٹ رحمت اللہ شیخ نے سندھ پولیس کی ٹیم کو اپنے ہرممکن تعاون کا یقین دلایا جب کہ تقریب کے آخر میں سندھ پولیس ٹیم کے مینیجر وسیم الدین کی جانب سے عرفان بہادر ملک مرتضیٰ تبسم ڈاکٹر عمران خان رحمت اللہ شیخ حاجی اشرف ایاز منشی انیس الرحمن اور ایم نسیم کو یادگاری شیلڈز دی گئ