میری آواز اللہ تعالیٰ کی طرف سے دیا ہوا عظیم تحفہ ہے، آرجے رمشاء باسط شیخ

اسلام آباد (عبدالہادی قریشی ) وفاقی دالحکومت کی رہائشی اقبال ؒ کی شاہین اور جن کی آواز پاکستان سمیت دنیا بھر میں موبائلز فونز پر سنی جاتی ہے ” آپ کا ملایا ہوا صارف اس وقت مصروف ہے ” آرجے رمشاء باسط شیخ کی خوبصورت آواز کو ہر شخص سنتا ہے آر جے رمشاء باسط شیخ نے میڈیا کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کہا کے میری آواز اللہ تعالیٰ کی طرف سے دیا ہوا تحفہ ہے جسے خدا داد صلاحیت کہا جا سکتا ہے آرجے رمشاء باسط شیخ کا مزید کہنا تھا کے مختلف اوقات کار میں مختلف ریکارڈنگز کی ہیں لیکن ریکارڈنگز کرنے کے کام کا آغاز سن 2017 سے کیا اس وقت میں یونیورسٹی کی ذہین طالبہ تھی آرجے رمشاء باسط شیخ نے مزید کہا کے سب سے بڑی مصروفیت گھر کو سنبھالنا ہے میں اپنی والدہ ماجدہ محترمہ سے بالکل بھی کام نہیں کرواتی گھر کے سارے کام خود کرنا پسند کرتی ہوں انھوں نے کہا تین دن ایف ایم ریڈیو پاکستان 1O1 پر میرے پروگرامز ہوتے ہیں بدھ سے لیکر جمعتہ المبارک تک جو پاکستانی عوام میں بہت مقبولیت رکھتے ہیں آرجے رمشاء باسط شیخ نے کہا کے میں اپنی آواز کو نرم ملائم خوبصورت و دلکش پرکشش بنانے کے لیئے گرم مشروبات کا استعمال کرتی ہوں اور جتنا ہو سکتا ہے گرم پانی پیتی ہوں
انھوں نے کہا کے مختلف اشتہارات میں مختلف سرکاری اور نجی اداروں میں مختلف آگاہی مہم میں مختلف ایئر لائنز میں مختلف ڈاکومنٹریز میں میری آواز عوام الناس کو سنائی دیتی ہے


انھوں نے مزید کہا کے اسکول کالج یونیورسٹی میں مختلف مقابلوں میں حصہ لیا اور فاتح قرار پائی انھوں نے مزید کہا کے مستقبل میں خبریں پڑھنے کا پختہ عزم و ارادہ رکھتی ہوں کسی بھی مشہور و اچھے نیوز چینل پر اپنی صلاحیتوں کو منوانا چاہتی ہوں آرجے رمشاء باسط شیخ نے کہا کہ میری زندگی کا خواب ہے کے یوم پاکستان کی پریڈ میں کمنٹری کرنے کے طور پر حصہ لے سکوں ان کا کہنا تھا کے میرے والدین مجھے بہت سپورٹ کرتے ہیں مجھے میری زندگی کے معاملے پر قدم قدم پر والدہ محترمہ اور والد محترم نے مکمل سپورٹ کیا آج والدین کی دعاؤں سے کامیابیوں کا سفر طے کر رہی ہوں انھوں نے کہا کے پہلا وائس اوور میں نے جب کیا تو میری عمر صرف 20 برس تھی اور اب لگ بھگ میں 25 برس کی ہو گئی ہوں. انھوں نے کہا میں نے کسی بھی ادارے فرد یا شخص سے آواز کی ریکارڈنگ سے متعلق کوئی تربیت یا ٹریننگ حاصل نہیں کی تحریر کو 10,15 بار پڑھ کر ریکارڈنگ کروائی ان کا ایک سوال کے جواب میں کہنا تھا کے 2017 میں مشہور کمپنیوں کے ساتھ کام کیا انھوں نے کہا ایک میڈیا گروپ جو کے وائز اوور کے لیئے کام کرتا تھا وہاں اپنی آواز کے سیمپل ریکارڈ کروائے اسی میری آواز کے سیمپل کو سن کر اس فون کمپنی نے اپنا معاہدہ مجھ سے کر لیا انھوں نے کہا کے اکثر ایسا ہوتا ہے جب کسی کو کال کرتی ہوں مجھے میری آواز سنائی دیتی ہے لیکن اب مجھے عادت ہو گئی ہے کبھی کبھی غصہ بھی آتا ہے جب کوئی کسی سے بہت ضروری کام ہو نمبر نہ ملے اور مجھے میری آواز سنائی دینے لگے تب غصہ بھی آتا ہےانھوں نے کہا قومی زبان اردو اور بین الااقوامی زبان انگریزی دونوں میں اپنی آواز کی ریکارڈنگ کروائی ہے.

اردو انگریزی دونوں زبانوں پہ ریکارڈنگ کرنے کا مکمل عبور حاصل ہے انھوں نے کہا کے میری پیدائش شہر قائد کراچی کلفٹن کی ہے ابتدائی تعلیم کراچی کے ایک مشہور و معروف اسکول سینٹ پیٹریک گرلز ہائی اسکول سے حاصل کی انٹرمیڈیٹ میں نے گورنمنٹ کالج فار وومین شارہ لیاقت سے کیا انھوں نے کہا بی ایس آنرز وفاقی اردو یونیورسٹی سے کیمسٹری کے مضمون میں شروع کیا بی اے کرنے کا دلی شوق کیا بی اے بھی مکمل کر لیا مستقبل قریب میں ماسٹرز کرنے کا خود سے پختہ عزم و ارادہ رکھتی ہوں 25 برس کی عمر میں میری آواز پاکستان بھر میں سنی جا رہی ہے جس پر انتہائی خوش ہوں آرجے رمشاء باسط شیخ نے کہا اگر مجھے حکومت پاکستان کی طرف سے سرکاری سطح پر پذپرائی ملے تو دوسرے ممالک میں جا کر اپنی آواز کا جادو جگاؤں گی اور بھرپور طریقے سے مملکت خدا داد اسلامی جمہوریہ پاکستان کا نام روشن کروں گی انھوں نے کہا کے پاکستانی نوجوانوں کو یہی پیغام دینا چاہتی ہوں کے اللہ تعالیٰ نے ہر انسان کو کچھ ناں کچھ صلاحیت ضرور دی ہوتی ہے اپنی اس صلاحیت کو پہچانیں اور اس صلاحیت پر کام کریں کبھی اپنے آپ کو گرنے نہ دیں اللہ پر توکل اور مکمل بھروسہ رکھیں بے شک وہ راستے بنانے والا رزق پہنچانے والا ہے