افغانستان، خواتین میں خودکشی کے رجحان میں اضافہ

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) افغان صوبے بدخشاں میں خواتین میں خودکشی کے رجحان میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ افغان خبر رساں ادارے طلوع نیوز کے مطابق بدخشاں کے محکمہ صحت کے حکام کا بتانا ہےکہ گزشتہ تین ماہ کے دوران تقریباً 30 افراد کو خودکشی کی کوشش کرنے پر اسپتال لایا گیا جن میں زیادہ تعداد خواتین کی تھی۔

بدخشاں اسپتال کے ترجمان نے کہا کہ گزشتہ تین ماہ کے دوران اسپتال لائے گئے متاثرین میں سے دو زندگی کی بازی ہارگئے جب کہ دیگر کی جان بچالی گئی۔ انہوں نے بتایا کہ گزشتہ 3 ماہ میں خودکشی کی کوشش کے 29 کیسز سامنے آئے جن میں سے 27 خواتین اور 2 مرد تھے ۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ خواتین میں خودکشی کے بڑھتے رجحان کی بنیادی وجہ گھریلو تشدد اور غربت ہے جس کےباعث صوبے کی خواتین خودکشی جیسے انتہائی اقدام کو ترجیح دینے پر مجبور ہیں جب کہ اس کی ایک اور وجہ گھر کے سربراہ کا بھی موجودہ حالات میں بیروزگار ہونا ہے جس سے معاشی تنگ دستی میں اضافہ ہوا ہے۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ حالیہ دنوں میں خودکشی کرنے والے ایک شخص کی بیوہ نے بتایا کہ بیروزگار ہونے کی وجہ سے ان کے گھریلو مسائل میں بے پناہ اضافہ ہوا جس سے ان کے شوہر نے خودکشی کی جب کہ ایک اور خاتون کا کہنا تھا کہ وہ اور ان کے شوہر دونوں ہی بیروزگار تھے۔

ان حالات میں جب بچوں نے کسی چیز کا تقاضہ کیا تو اسے خریدنے کے لیے ان کے پاس رقم نہیں تھے جس پر وہ ہر وقت پریشان رہتے اور اسی وجہ سے ان کے شوہر نے خودکشی کرلی۔

صوبائی حکام نے صوبے میں خودکشی کے بڑھتے رجحان پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے جب کہ عوام کا کہنا ہے کہ خراب معاشی حالات ہر گزرتے دن کے ساتھ مسائل میں اضافہ کررہے ہیں جس وجہ سے لوگ خودکشی کی طرف بڑھ رہے ہیں۔