کپتان کا ایک اور وعدہ وفا، ایک سال میں 1 کروڑ 44 لاکھ بچوں نے تعلیم کا آغاز کیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) اقتصادی سروے رپورٹ 22-2021ء کے مطابق پاکستان میں ایک سال کے دوران شرح خواندگی میں صرف 0.4 فیصد اضافہ ہوا۔ اقتصادی سروے میں بتایا گیا ہے کہ ملکی آبادی 22 کروڑ 47 لاکھ ہوگئی، دیہی آبادی 63 فیصد اور شہری آبادی 37 فیصد ہے۔ سروے رپورٹ کے مطابق ایک سال کےدوران شرح خواندگی 0.4 فیصد بڑھ کر 62.4 سے 62.8 فیصد ہوگئی۔

سرکاری اعداد و شمار میں بتایا گیا ہے کہ ملک میں 3 سے 5 سال کی عمر کے ایک کروڑ 44 لاکھ بچوں نے تدریسی عمل شروع کیا جو کہ گزشتہ برس کے مقابلے میں 6.4 فیصد زیادہ ہے۔ رپورٹ کے مطابق پرائمری جماعتوں میں زیر تعلیم بچوں کی تعداد 4.2 فیصد بڑھ کر 2 کروڑ 57 لاکھ، مڈل جماعتوں کے طلباء کی تعداد 4 فیصد اضافے کے ساتھ 79 لاکھ سے 83 لاکھ جبکہ نویں اور دسویں جماعتوں کے بچوں کی تعداد 6.5 فیصد بڑھ کر 42 لاکھ سے 45 لاکھ کے درمیان ہوگئی ہے۔

سروے رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ملک بھر میں گیارہویں اور بارہویں جماعتوں کے طلبہ کی تعداد 25 لاکھ کے قریب ہے، اس کے علاوہ رواں برس فنی اور تکنیکی تعلیم حاصل کرنیوالوں کی تعداد بھی گزشتہ برس کے مقابلے میں 7.7 فیصد بڑھ کر 4 لاکھ 60 ہزار سے 5 لاکھ کے درمیان ہوگئی ہے۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق ملک میں 73 فیصد مرد جبکہ 51.9 فیصد خواتین خواندہ ہیں۔ پنجاب میں مجموعی خواندگی کی شرح 66 فیصد ، سندھ میں 61.8 فیصد، خیبر پختونخوا میں 55.1 فیصد جبکہ بلوچستان میں 54.5 فیصد ہے۔