مریم نواز کی لندن روانگی اور نواز شریف کے ہمراہ ممکنہ واپسی کی تیاریاں

 لاہور (نیوز ڈیسک) مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کو ہائی کورٹ کے حکم پر پاسپورٹ واپس ملنے کے بعد، اُن کی بیرون ملک روانگی کی تیاریاں شروع کردی گئی  ہیں جب کہ امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کہ مریم نواز اپنے والد سابق وزیراعظم نواز شریف کے ہمراہ وطن واپس آئیں گی۔

مریم نواز نےسماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری بیان میں تصدیق کی ہے کہ انہیں پاسپورٹ واپس مل چکا ہے۔ لیگی ذرائع کا کہنا ہے کہ مریم نواز رواں ماہ کے دوران ہی لندن روانہ ہو جائیں گی اور اس سلسلے میں تیاریاں شروع کردی گئی ہیں، جن کے مطابق مریم نواز کی 2 علیحدہ پروازوں پر ٹکٹیں آج ہی بک کروائی جائیں گی ساتھ ہی پاسپورٹ سے متعلقہ بیرون ملک روانگی کے تمام قانونی تقاضے بھی مکمل کیے جائیں گے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ مریم نواز کے پاسپورٹ پر برطانیہ کا ویزا لگا ہوا ہے۔ مریم نواز تقریباً 3 سال کے بعد اپنے والد سے ملیں گی۔ وہ اپنے والد کی عیادت اور اپنی سرجری کے لیے پہلے بھی لندن جانا چاہتی تھیں۔ علاوہ ازیں مریم نواز پاسپورٹ نہ ہونے کے باعث لندن میں اپنے بیٹے جنید صفدر کی تقریبِ نکاح میں بھی شریک نہیں ہو سکی تھیں۔

پارٹی ذرائع کے مطابق مریم نواز لندن میں طویل عرصے سے التوا کا شکار اپنی سرجری کے لیے معالجین سے ملنے کے علاوہ اپنے والد اور بھائیوں کے ساتھ کچھ وقت گزاریں گی۔ مریم نواز اپنے والد، سابق وزیراعظم نواز شریف کے ساتھ ملکی سیاسی و معاشی معاملات پر تفصیلی تبادلہ خیال کریں گی۔

ذرائع نے بتایا کہ مریم نواز لندن روانگی سے قبل پارٹی رہنماؤں سے مشاورت کریں گی اور نواز شریف کو پارٹی کی اجتماعی رائے اور سیاسی حکمت عملی پر بریف کریں گی۔علاوہ ازیں مریم نواز اپنے والد کو جلد از جلد وطن واپسی پر قائل کریں گی۔اس سلسلے میں امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کہ مریم نواز،  نواز شریف کے ہمراہ وطن واپس آئیں گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں