ن لیگ کے ارکان قومی اسمبلی کے تحریک انصاف سے رابطے، اعتماد کے ووٹ میں حمایت کے وعدے

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) پاکستان مسلم لیگ ن کی جانب سے ارکان قومی اسمبلی نے پی ٹی آئی سے رابطوں کے دوران اعتماد کے ووٹ میں حمایت کے وعدے کئے گئے ہیں۔

مسلم لیگ ن سے تعلق رکھنے والے ارکان قومی اسمبلی کی جانب سے پاکستان تحریک انصاف سے رابطوں کا سلسلہ جاری ہے۔

ان رابطوں کے متعلق پی ٹی آئی رہنماؤں کی جانب سے اہم دعوے بھی کئے گئے ہیں جس کے مطابق ن لیگ کے ارکان اعتماد کے ووٹ میں غیر حاضر ہوں گے یا ہماری ہدایت کے مطابق چلیں گے اور اعتماد کے ووٹ کے معاملے پر یہ لیگی ارکان قومی اسمبلی پی ٹی آئی قیادت کے ساتھ اپنی کمٹمٹ  پورا کریں گے۔

دوسری جانب عمران خان نے پارٹی قیادت کو رابطے کرنے والے مسلم لیگ ن کے ارکان قومی اسمبلی بارے پالیسی دیدی ہے۔

عمران خان نے پالیسی دیتے ہوئے ہدایات جاری کی ہیں کہ ن لیگ کے صرف  ان ارکان قومی اسمبلی  سے  ٹکٹ کی حامی بھری جائے جنکو ہم ایڈجسٹ کرسکتے ہوں  اور جن ارکان قومی اسمبلی کو ہم ٹکٹ کے لئے  ایڈجسٹ نہیں کرسکتے ان سے کوئی غلط وعدہ نہ کیا جائے ۔

مسلم  لیگ ن کے رابطہ کرنے والے ارکان قومی اسمبلی کی تعداد پندرہ کے قریب ہیں۔

خیال رہے کہ سابق وزیراعظم اور چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے وزیراعظم شہباز شریف کے خلاف اعتماد کے ووٹ کی کارروائی کرنے کی منظوری دے دی ہے۔

اس حوالے سے ذرائع نے بتایا ہے کہ مسلم لیگ (ن) کے حکومتی اتحاد میں 13 اراکین قومی اسمبلی کی ناراضگی کا انکشاف ہوا ہے، اتحادیوں کے بھی بہت سے معاملات پر تحفظات ہیں جس کی وجہ سے شہباز شریف مشکلات کا شکار ہیں۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ پی ٹی آئی نے یہ فیصلہ ایم کیو ایم کے تحفظات کو دیکھتے ہوئے کیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں